چینی ماہرین نے دنیا کا جدید ترین کیمرہ ایجاد کر لیا

چین کے ماہرین نے مصنوعی ذہانت یعنی AI کا حامل ایک ایسا جدید ترین کیمرا تیار کرلیا ہے جو 28 میل دور سے تصویر کھینچ سکتا ہے کیمرا میں لیزر امیجنگ اور ایڈوانس آرٹیفیشل انٹیلی جنس (مصنوعی ذہانت) کا سافٹ ویئر استعمال کیا گیا ہےجسے لائیڈر (LIDAR) کا نام دیا گیا ہے، یہ سافٹ ویئر سموگ، دھند یا آلودگی کی وجہ سے عمومی طور پر خراب ہو جانے والی تصاویر کو بھی بہترین انداز میں کھینچنے کی صلاحیت رکھتا ہے اگرچہ لائیڈر ٹیکنالوجی اس سے قبل دیگر کیمروں میں استعمال کی جا چکی ہے لیکن یہ نیا کیمرا تیار کرنے والے ماہرین کا کہنا ہے کہ سابقہ لائیڈر کیمروں میں آرٹیفیشل انٹیلی جنس نہیں ہوتی تھی اور یہ سافٹ ویئر کی مدد سے بہترین تصاویر کھینچ سکتا ہے یہ سافٹ ویئر ان چیزوں سے نکلنے والی روشنی کی منعکس ہونے والی شعاعوں کو نظر انداز کر دیتا ہے جس کی تصویر کھینچنا ہو۔ چونکہ یہ کیمرا سبجیکٹ (جس چیز کی تصویر کھینچی جا رہی ہو) اور کیمرے کے بیچ کا فاصلہ ناپنے کیلئے لیزر ٹیکنالوجی استعمال کرتا ہے یہ ٹیکنالوجی سبجیکٹ سے نکلنے والے فوٹونز کے کیمرے تک پہنچنے کے وقت کو فاصلے سے تبدیل کر دیتا ہے اور اس طرح سافٹ ویئر صرف ان ہی اجزاء کو اہمیت دیتا ہے جو بہترین فوٹو کھینچنے کیلئے ضروری ہوں۔ کیمرے کی ایک اور خاص بات یہ ہے کہ یہ 1550 نینو میٹرز کی حد تک لیزر ویو لینتھ استعمال کر سکتا ہے۔ امریکا کی یونیورسٹی ایم آئی ٹی نے کیمرے کی ساخت اور سافٹ ویئر پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس میں جدید ترین ایلگوریتھم استعمال کیا گیا ہے جو دور سے تصاویر کو ٹکڑوں کی صورت میں کھینچ کر تھری ڈی ماڈلنگ کے ذریعے انہیں جوڑتا ہے۔