برطانوی ماہرین کی حیرت انگیز تحقیق

برطانوی یونیورسٹی نے سروے کے بعد کہا ہے کہ جو افراد سست چلتے ہیں ان کی زندگی مختصر ہو جاتی ہے اور تیز قدموں سے چلنے والے افراد کی زندگی طویل ہوسکتی ہے۔ جسکی وجہ یہ ہے کہ تیز چلنے کا عمل جسمانی افعال کی بہتری کو ظاہر کرتا ہے۔
یونیورسٹی آف لیسیٹر اور لوبورو یونیورسٹی کے ماہرین کے مطابق خواہ لوگ موٹے ہوں یا دبلے اگر انہیں تیز قدموں سے چلنے کی عادت ہے تو ان کی زندگی طویل ہو سکتی ہے جبکہ انکے مقابلے میں کم وزن والے خواتین و حضرات کو اگر سست رفتاری سے چلنے کی عادت ہے تو مردوں کی اوسط عمر 64.8 سال اور خواتین کی اوسط عمر 72.4 برس ہوسکتی ہے۔اپنی نوعیت کی یہ انوکھی تحقیق ہے کہ جس میں کسی شخص کے وزن کو نظرانداز کر کے اس کے چلنے کی رفتار سے زندگی کے دورانیے پر غور کیا گیا ہے۔اس سلسلے میں یونیورسٹی آف لیسیٹر میں عام برتاؤ اور صحت کے ماہر پروفیسر ٹام یاٹس اور ان کے ساتھیوں نے تحقیق کر کے ایک رسالہ لکھا ہے اور وہ کہتے ہیں کہ شاید جسمانی طور پر فٹنس ہی طویل زندگی کی علامت ہوتی ہے اور اسی وجہ سے ہم لوگوں کو تیز قدموں سے چلنے کا مشورہ دیں گے تاکہ ان کی جسمانی صحت بہتر ہوسکے اور وہ لمبی زندگی جی سکیں۔