ڈاکٹر انور سجاد کے انتقال پر تمام سیاسی جماعتوں کا اظہار افسوس

ڈاکٹر انور سجاد کے انتقال پر وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات ونشریات فردوس عاشق اعوان ن لیگ کے صدر شہبازشریف پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار صوبائی وزیر اطلاعات صمصام بخاری نے گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا۔ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے ڈاکٹر انور سجاد کے انتقال پر گہرے رنج و غم کا اظہارکرتے ہوئے کہا ہے کہ” آج پاکستان علم و ادب کے میدان میں ایک درخشندہ ستارے سے محروم ہو گیا ہے”قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے کہا کہ “معاشرے میں بہتری کیلئے ان کی تڑپ انکی تحریروں میں جھلکتی ہے وہ اپنی کتابوں اور تحریروں کی صورت میں زندہ رہیں گے افسوس حکومت نے اس صاحب علم کے علاج معالجے کے حوالے سے حق ادا نہ کیا۔ اللہ تعالی مرحوم کو اپنے جوار رحمت میں اعلی مقام عطا فرمائے اور لواحقین کو صبر جمیل دے”بلاول بھٹو نے کہا ہے “ڈاکٹر انور سجاد کی خدمات کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا” انکی رحلت اردو ادب کیلئے بڑا سانحہ ہے” ڈاکٹر انور سجاد کا اصل نام سید محمد سجاد انور علی بخاری تھا اور انکا تعلق اندرون لاہور سے تھا۔ مرحوم1965ء میں پاکستان ٹیلی ویژن سے وابستہ ہوگئے جہاں انہوں نے ڈرامہ نگاری کیساتھ اداکاری بھی کی۔انہوں نے لاتعداد ڈرامے اور افسانے لکھے۔1989ء ان کی فنی خدمات کے اعتراف میں صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی سے بھی انہیں نوازاگیا۔ڈاکٹر انور سجاد کی عمر 84 برس تھی۔انکی اکلوتی بیٹی بیرون ملک رہائش پزیر ہونے کی وجہ سے والد کے آخری دیدار سے محروم رہیں۔