ماہرین فلکیات نے ایک سیارے پر پانی تلاش کر لیا ہے

ماہرین فلکیات نے پہلی بار کسی سیارے پر پانی کو دریافت کیا ہے جو کسی دور دراز والے ستارے کے رہائش پزیر زون میں گھوم رہا ہے جسے K2-18b کہا جاتا ہے۔ 10 سال کے اندر ، نئی خلائی دوربینیں یہ طے کرنے کے قابل ہوسکتی ہیں کہ آیا K2-18b کے ماحول میں ایسی گیسیں ہیں جو زندہ حیاتیات کے ذریعہ تیار کی جاسکتی ہیں۔اس کی تفصیلات سائنسی جریدے نیچر فلکیات میں شائع کی گئیں ہیں مرکزی سائنسدان ، یونیورسٹی کالج لندن (یو سی ایل) کے پروفیسر جیوانا ٹینیٹی نے اس دریافت کو بہت بڑی کامیابی قرار دیا ہے۔انہوں نے کہا ، “یہ پہلا موقع ہے جب ہم نے کسی ستارے کے آس پاس رہائش پذیر زون میں کسی سیارے پر پانی کا پتہ لگایا ہے جہاں درجہ حرارت ممکنہ طور پر زندگی کی موجودگی کے مطابق ہوتا ہے رہائش پزیر زون ستارے کے آس پاس کا علاقہ ہے جہاں کسی سیارے کی سطح پر پانی کے مائع کی شکل میں موجود رہنے کے لئے درجہ حرارت کافی حد تک مناسب ہے۔ اور اس پر زندگی کیلے ضروری چیزوں کے آسار پاے جاتے ہیں۔