کیسے ایک گُم ذہن سانٸس دان نے آج کی جدید دنیا کی بنیاد رکھی. البرٹ آٸن سٹاٸن۔

یہ سانٸس دان بچپن سے ہی بہت گم ذہن تھا. اسی وجہ سے والدین نے سات برس کی عمر میں سکول داخل کروایا اس عمر میں بھی وہ ٹھیک سے بول نہیں سکتا تھا. اس کو چیزیں یاد کرنے اور سمجھنے میں بہت مشکل پیش آتی ہے. سکول والے آخر تنگ آ کر سکول سے اسے فارغ کر دیتے ہیں. اس کی پڑھاٸ میں کوٸ دلچسپی نہیں لیکن موسیقی بہت پسند تھی ہر وقت موسیقی میں مگن رہتا. عمر کے ساتھ مشکل سے کچھ تعلیم حاصل کی اور نوکری کی کوشش کی لیکن ناکام رہا. لیکن یہ شخص بعد میں دنیا کے ذہین ترین انسانوں میں شمار ہوا. اس نے ریاضی اور فزکس کی دنیا کو بدل کر رکھ دیا تھا.
اس سانٸس دان کی زندگی میں بڑی تبدیلی اس وقت آٸ جب اس کو میکس نامی استاد نے پڑھانا شروع کر دیا. یہ میڈیکل کا طالبِعلم تھا اور آٸن سٹاٸن کے گھر کھانا کھانے آتا رہتا تھا. میکس نے آٸن سٹاٸن کو بہت دلچسپ طریقے سے روشنی کا بتایا اس سے آٸن سٹاٸن کی تصور کاری بڑھ گٸ. یہان سے اس کی ذہانت کی شروعات ہوتی ہے. کسی نے سچ کہا ہے ”ایک استاد کا طالبِعلم کی تعلیم میں بہت اہم کردار ہوتا ہے کہ وہ بچے وہ روشن بناتا ہے یا گُم ذہن. اس کے بعد آٸن سٹاٸن نے مشکل سے تعلیم مکمل کی لیکن بہت کوشش کے بعد بھی نوکری نا مل سکی. پھر مجبوراً سرکاری کلرک بھرتی ہو گیا جہان اسے بہت وقت مل جاتا اور یہ خوب سوچ و غور کرتا رہتا. اسی عادت نے اس کو اس قابل کیا کہ1905 میں وہ ایک وقت میں چار قانون دیے. فوٹوالیکٹرکس، براٶنین موشن، ماس اینڈ انرجی مساوات، تھیوری آف ریلیٹیوتی.
ان قوانین نے فزکس اور فزکس والوں کو بدل کر رکھ دیا. ان قوانین پر ہی آج کی جدید دنیا کی تشکیل ممکن ہوٸ. اس کے بعد 1921 میں اس کو نوبل انعام بھی دیا گیا تھا. 1933 میں امریکہ کا سفر کیا اور بہت سے ساٸنسی تجربات کیے. جنگِ عظیم دوم میں آٸن سٹاٸن کی تحریک اور تجربات کی مدد سے امریکہ کے لیے ایٹم بم بنانا مکمن ہوا. 76 سال کی عمر میں 1955 پیٹ کے عارضے کی وجہ سے اس کا انتقال ہوا.

اس خبر پر بحث کرنے کے لئے ابھی ہمارے پورٹل پر فری رجسٹر کریں۔

زمرے