fbpx

The Report Center – رپورٹ سنٹر

فیشن ڈیزائنر عینا علی کی بیٹی کا کورونا ٹیسٹ مثبت

فیش ڈیزائنر عینا علی نے بیٹی کا کورونا ٹیسٹ مثبت آنے اور جلد علاج شروع نہ کرنے پر پنجاب حکومت کو آڑے ہاتھوں لے لیافیشن ڈیزائنر عینا علی خان کے آڈیو بیان نے پنجاب حکومت کی جانب سے کورونا وائرس سے نمٹنے کے لیے کیے جانے والے انتظامات پر سوالات کھڑے کردیے ہیں۔انہوں نے کہا کہ لندن سے فلائٹ کے دوران بیٹی کو کورونا کا شک ہوا تو از خود لیبارٹری ٹیسٹ کرایا جو مثبت آیا، اس دوران لیبارٹری نے ٹیسٹ مثبت آنے ہونے پرحکومتی اداروں کو اطلاع دی۔عینا علی کا کہنا تھا کہ 2 گھنٹے بعد ایمبولینس آئی اور گنگارام اسپتال لے جا کر پھر 2 گھنٹے انتظار کرایا اور اسپتال والوں نے کہا کہ ان کے پاس کورونا کا بندوبست نہیں، اس کے بعد ڈیفنس میں پی کے ایل آئی بھجواکر پھرایمبولینس میں ڈیڑھ گھنٹے انتظارکرایا گیا۔انہوں نے بتایا کہ پی کے ایل آئی کے ڈاکٹروں نے کہا آپ پڑھی لکھی ہیں گھرجائیں اور دھیان رکھیں لہٰذا بیٹی کو گھر لاکر ایک کمرے تک محدود کردیا، رات میں فون آیا کہ اب کورونا کا بندوبست ہوگیا، بیٹی کو بھجوا دیں۔انہوں نے شکایت کی کہ جس اسپتال میں بیٹی کو رکھا گیا ہے وہاں گزشتہ روز سے اب تک کوئی وٹامن نہیں دیاگیا اور بیٹی بھوکی ہے جسے اب تک کھانا بھی نہیں دیا گیا۔عینا علی کے مطابق بیٹی کو جس وارڈ میں رکھا گیا ہے وہاں مچھروں کی بہتات ہے۔۔ خیال رہے کہ پاکستان میں کورونا وائرس کے باعث اب تک 3 افراد جاں بحق ہوچکے ہیں جن میں سے 2 کا تعلق خیبرپختونخوا اور ایک کا سندھ ہے۔ملک بھر میں مریضوں کی تعداد 495 تک جاپہنچی ہے جس میں سے 252 مریض سندھ، پنجاب سے 96، بلوچستان میں 92، خیبرپختونخوا میں 23، گلگت میں 21، اسلام آباد میں 10 اور ایک آزاد کشمیر میں سامنے آیا ہے۔

اس خبر پر بحث کرنے کے لئے ابھی ہمارے پورٹل پر فری رجسٹر کریں۔

جواب دیں

زمرے
Close Menu