fbpx

The Report Center – رپورٹ سنٹر

پاکستان سٹاک مارکیٹ بدترین مندی کا شکار

پاکستان اسٹاک ایکس چینج میں گذشتہ ہفتے ملکی تاریخ کی بدترین مندی ریکارڈ کی گئی،کے ایس ای 100 انڈیکس 2 ہزار پوائنٹس گھٹ گیا۔ انڈیکس 38 ہزار اور 37 ہزار پوائنٹس کی دو بالائی حد سے گر گیا اور 36 ہزار پوائنٹس کی پست ترین سطح پر بند ہوا،مندی کے سبب مارکیٹ میں سرمایہ کاروں کے 360 ارب روپے ڈوب گئے جس کی وجہ سے سرمائے کا مجموعی حجم 71 کھرب روپے سے کم ہو کر 67 کھرب روپے رہ گیا۔ حصص کی فروخت کے دباؤ سے 58 فیصد حصص کی قیمتیں کم ہو گئیں۔ پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں گذشتہ ہفتے کاروبار کے پہلے ہی دن مارکیٹ مندی کی لپیٹ میں آگئی اور مندی کے اثرات 3غالب رہےجس کی وجہ سے انڈیکس 2899.78 پوائنٹس کم ہو گیا تاہم 2 دن کی معمولی تیزی سے انڈیکس نے 740.99 پوائنٹس ریکور کئے مگر مجموعی طور پر مارکیٹ پر مندی کے بادل چھائے رہے۔ ماہرین اسٹاک کے مطابق کورونا وائرس کے خوف نے دنیا کی معیشت کو بری طرح متاثر کیا ہے حتی کہ دنیا پھر کی اسٹاک مارکیٹس میں بدترین مندی سے دوچار ہوتی دیکھائی دے رہی ہیں۔ گذشتہ ہفتے بد ترین مندی کے سبب اسٹاک مارکیٹ میں 3 دن 45 منٹ کیلئے کاروبار روکا گیا یعنی پیر، جمعرات اور جمعہ اسٹاک مارکیٹ کیلئے بدترین دن ثابت ہوئے ان تین دنوں میں انڈیکس 2899.78 پوائنٹس کم ہو گیا۔گذشتہ ہفتے پہلی بار ایسا ہوا کہ 11 جولائی 2017 کے بعداسٹاک مارکیٹ میں اب تک کی سب سے بڑی مندی رونما ہوئی کیونکہ 11 جولائی 2017 کو اسٹاک مارکیٹ میں 4.65 فیصد کمی ہوئی تھی اس سے قبل 9 مارچ کو بھی اسٹاک مارکیٹ کے 100 انڈیکس میں 2100 سے زائد پوائنٹس کی کمی کے بعد بینچ مارک انڈیکس 36 ہزار 113 پوائنٹس پر آگیا تھا اور کاروبار کے دوران 5 فیصد سے زائد کمی پر ٹریڈنگ 45 منٹ کے لیے روک دی گئی تھی تاہم پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں حکومتی مالیاتی اداروں کی جانب سے سرمایہ کاری کی بدولت 2دن میں انڈیکس نے 740.99 پوائنٹس ریکور کئے۔ پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں گذشتہ کاروباری ہفتے کے اختتام پر کے ایس ای 100 انڈیکس میں 2158.79 پوائنٹس کی کمی ریکارڈ کی گئی جس سے انڈیکس 38219.67 پوائنٹس سے کم ہو کر 36060.88 پوائنٹس ہو گیا اسی طرح کے ایس ای 30 انڈیکس 1368.76 پوائنٹس کی کمی سے 17385.40 پوائنٹس سے گھٹ کر 16016.64 پوائنٹس پر بند ہوا جبکہ کے ایس ای آل شیئرز انڈیکس 26557.85 پوائنٹس سے کم ہو کر 25291.96 پوائنٹس پر آگیا۔ مندی کے سبب مارکیٹ کے سرمایے میں 3 کھرب 60 ارب 90 کروڑ 66 لاکھ 76 ہزار 901 روپے کی کمی ریکارڈ کی گئی جس کے نتیجے میں سرمائے کا مجموعی حجم کر 71 کھرب 56 ارب 65 کروڑ 21 لاکھ 53 ہزار 703 روپے سے گھٹ کر 67 کھرب 95 ارب 74 کروڑ 54 لاکھ 76 ہزار 802 روپے ہو گیا۔ پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں گذشتہ ہفتے ٹریڈنگ کے دوران کے ایس ای 100 انڈیکس ایک موقع پر 38332.51 پوائنٹس کی بلند سطح کو چھو گیا تھا تاہم مندی کے اثرات غالب آنے سے انڈیکس ایک موقع پر 34279.60 پوائنٹس کی کم سطح پر بھی دیکھا گیا۔پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں گذشتہ ہفتے زیادہ سے زیادہ11ارب روپے مالیت کے30 کروڑ 79 ہزار 60 ہزارحصص کے سودے ہوئے جبکہ کم سے کم 9 ارب روپے مالیت کے 23 کروڑ 6 لاکھ 98 ہزار حصص کے سودے ہوئے تھے۔ پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں گذشتہ ہفتے کے دوران مجموعی طور پر 1745 کمپنیوں کا کاروبار ہوا جس میں سے 652 کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ، 1012 میں کمی اور 9181 کمپنیوں کی قیمتوں میں استحکام رہا۔ کاروبار کے لحاظ سے فوجی سیمنٹ،بینک آف پنجاب،میپل لیف،کے الیکٹرک لمیٹڈ،ٹی آر جی پاک لمیٹڈ،حیکسول پیٹرول،یونٹی فوڈز لمیٹڈ،پاک انٹر نیشنل بلک،پائینیر سیمنٹ ڈی جی کے سیمنٹ،پاک پیٹرولیم،آئل اینڈ گیس ڈیولپمنٹ،چیرٹ سیمنٹ اورپاور سیمنٹ سر فہرست رہے۔

اس خبر پر بحث کرنے کے لئے ابھی ہمارے پورٹل پر فری رجسٹر کریں۔

زمرے
Close Menu