یکم مئی یوم مزدور کے طور پر کیوں منایا جاتا ہے اس دن کیا واقعہ پیش آیا تھا

یکم مئی “یوم مزدور” کیا ہے ؟

یکم مئی مزدوروں کے عالمی دن کے طور پر منایا جاتا ہے، یکم مئی (یوم مئی) کا آغاز 1886ء میں محنت کشوں کی طرف سے 8 گھنٹے ڈیوٹی کے اوقات کار کے مطالبے سے ہوا ، 1886کوامریکی شہر شکاگو میں اپنے حقوق کیلئے جمع ہوئے مزدوروں پرپولیس نے گولی چلا دی تھی،اس واقعے کا مقدمہ 21 جون 1886 کو کریمنل کورٹ میں چلا۔ دفاع میں کسی کو صفائی پیش کرنے کی اجازت نہیں تھی۔ ۔ اٹارنی جنرل نے عدالت سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ معاشرے کو بچانے کے لیے ان مزدوروں کو سزا دی جائے جس پر19 اگست کو پانچ مزدور رہنماؤں کو سزائے موت سنائی گئی، جبکہ دیگر کو 15 سال قید، سنائی گئی ایک مزدور لیڈر نے قید میں خودکشی کر لی تھی 11 نومبر 1887 کو مزدور رہنماؤں اینجل، اسپائز، پارسنز اور فشر کو پھانسی دے دی گئی، ان میں سے صرف دو افراد امریکی شہری تھے باقی انگلینڈ، آئرلینڈ اور جرمنی کے شہری تھے۔ ان رہنماؤں کے جنازے میں 6 لاکھ لوگوں نے شرکت کی۔1889میں پیرس میں ’انقلاب فرانس‘ کی صد سالہ یادگاری تقریب کے موقعے پر ریمونڈ لیونگ نے یہ تجویز رکھی کہ 1890 میں شکاگو کے مزدوروں کی برسی کے موقعے پر عالمی طور پر احتجاج کیا جائے۔ یوم مئی عالمی طور پر منانے کے لیے اس تجویز کو با قاعدہ طور پر 1891 میں تسلیم کر لیا گیا۔ اب دنیا بھر میں قانونی طور پر 8 گھنٹے کی ڈیوٹی کو تسلیم کر لیا گیا ہے۔ اور یکم مئی کو پاکستان سمیت دنیا کے کچھ ممالک میں لیبر ڈے منایا جاتا ہےجن میں ارجنٹائن، بولیویا، برازیل، بحرین، بنگلہ دیش سمیت کمبوڈیا اور چین شامل ہیں، جبکہ امریکا کی مختلف ریاستوں میں اکتوبر کے پہلے ہفتے میں کسی ایک روز منایا جاتا ہے، اسی طرح بہاماس میں لیبر ڈے 7 جون کو چھٹی کی جاتی ہے، آسٹریلیا،نیدر لینڈز نیوزی لینڈ اور کینیڈا میں یہ دن ستمبر کے پہلے سوموار کو منایا جاتا ہے، انگلینڈ میں یوم مئی کی چھٹی ہوتی ہے لیکن بینک بند نہیں ہوتے،کمیونسٹ ممالک میں یوم مئی کو فوجی پریڈز کا بھی اہتمام کیا جاتا ہے۔

اس خبر پر بحث کرنے کے لئے ابھی ہمارے پورٹل پر فری رجسٹر کریں۔

زمرے