حکومت پنجاب کا مویشیوں پر ٹیکس

حکومت پنجاب نے یکم جولائی سے مویشیوں پر 500 روپے اور 100 روپے ٹیکس عائد کرنے کا فیصلہ کرلیا۔ تفصیلات کے مطابق محکمہ لوکل گورنمنٹ اینڈ کمیونٹی ڈویلپمنٹ کے مراسلہ نمبر NO.SO-(Companies) LG2-252/20415 (P-V) کے ذریعے پنجاب کی کیٹل مارکیٹ مینجمنٹ کمپنی کے تمام مینجنگ ڈائریکٹرز کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ کابینہ کی اسٹینڈنگ کمیٹی برائے فنانس اینڈ ڈویلپمنٹ کی ہدایت کے مطابق اس لیوی (LEVY)ٹیکس وصولی کیلئے ہدایت کی گئی ہے۔ مراسلہ کے مطابق مویشی منڈی میں فروخت کیلئے لائے جانے والے جانورکسی بھی ضلع کی حدود میں جب داخل ہونگے تو بڑے جانور کا 500 اور چھوٹے جانور کا100 روپے فی جانور ٹیکس وصول کرلیا جائے۔ مراسلہ میں واضح طور پر کہا گیا ہے کہ ٹیکس وصولی کا طریقہ کار طے کر کے یکم جولائی سے ہر صورت وصولی شروع کردی جائے۔ تمام مینجنگ ڈائریکٹرز کو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ ٹیکس وصولی کے ٹھیکیداروں کے ذریعے نہیں کریں گے بلکہ محکمہ خود کرے گا۔ صحیح طریقہ سے ذمہ داری ادا نہ کرنے والے مینجنگ ڈائریکٹرز حکومت کو جواب دہ ہونگے۔ مراسلہ کے مطابق ٹھیکیداری نظام میں مویشی مالکان کا استحصال ہوتا ہے۔ حکومت پنجاب کے اس فیصلہ سے مویشی پالوں اور کاشتکاروں میں تشویش بڑھ گئی ہے کیونکہ یہ ٹیکس منڈی پہنچنے سے پہلے ہی وصول کرلیا جائے گا۔ خواہ جانور فروخت ہوں یا نہ ہوں۔مویشیوں کا کاروبار کرنے والوں نے حکومت پنجاب سے اپنے اس فیصلہ پر نظر ثانی کی اپیل کی ہے۔ مراسلہ کے مطابق مویشی منڈی میں فروخت کیلئے لائے جانے والے جانورکسی بھی ضلع کی حدود میں جب داخل ہونگے تو بڑے جانور کا 500 اور چھوٹے جانور کا100 روپے فی جانور ٹیکس وصول کرلیا جائے۔

اس خبر پر بحث کرنے کے لئے ابھی ہمارے پورٹل پر فری رجسٹر کریں۔

زمرے