چین کے لئے جاسوسی کا الزام، آسٹریلیا کی اپوزیشن جماعت کے رکن کے دفتر پر چھاپہ

آسٹریلیا کی اپوزیشن جماعت کے ایک رکن کے خلاف نیشنل سیکیورٹی ایجنسی نے مبینہ طور پر چین سے تعلقات کی تحقیقات شروع کردیں جس کے باعث انہیں پارٹی سے معطل کرنے کا اعلان کردیا گیا۔برطانوی نشریاتی ادارے کی رپورٹ کے مطابق حکام کی جانب سے نیو ساتھ ویلز سے تعلق رکھنے والے رکن پارلیمنٹ شوکت موسلمین کے دفتر پر چھاپہ مارا گیا۔پولیس اور انٹیلی جنس ایجنسیوں کا کہنا تھا کہیہ پہلے سے جاری تحقیقات کا حصہ ہے لیکن انہوں نے اس حوالے سے کوئی تفصیل نہیں بتائی۔آسٹریلیا کی لیبر پارٹی کی رہنما جوڈی مک کا کہنا تھا کہ میڈیا سے خبریں ملی ہیں کہ شوکت موسلمین کے دفتر پر چین کی حکومت کی ممکنہ مداخلت سے متعلق الزامات پر چھاپہ مارا گیا جو انتہائی تشویش ناک ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ان تحقیقات کو اپنا راستہ بنانے کی ضرورت ہے اور وہ ہمارے ساتھ نہیں بیٹھیں گے۔آسٹریلیا کے وزیراعظم اسکاٹ موریسن نے کہا کہ میں تحقیقات کی تفصیلات نہیں بتا سکتا لیکن یہ کچھ عرصے سے جاری ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت اس بات پر پرعزم ہے کہ آسٹریلیا کے معاملات میں کسی کو بھی مداخلت کی اجازت نہیں دی جائے گی۔اسکاٹ موریسن نے کہا کہ ہم اس پر قائم رہیں گے اور کارروائی کریں گے، جس کا ایک مظہر آج دیکھا گیا۔انٹیلی جنس ایجنسی نے زیادہ تفصیلات بتانے سے گریز کرتے ہوئے کہا کہ یہ سرگرمی معاشرے کے لیے مخصوص خطرے سے متعلق نہیں ہے۔ حکام کی جانب سے نیو ساتھ ویلز سے تعلق رکھنے والے رکن پارلیمنٹ شوکت موسلمین کے دفتر پر چھاپہ مارا گیا۔پولیس اور انٹیلی جنس ایجنسیوں کا کہنا تھا کہ یہ پہلے سے جاری تحقیقات کا حصہ ہے لیکن انہوں نے اس حوالے سے کوئی تفصیل نہیں بتائی۔آسٹریلیا کی لیبر پارٹی کی رہنما جوڈی مک کا کہنا تھا کہ میڈیا سے خبریں ملی ہیں کہ شوکت موسلمین کے دفتر پر چین کی حکومت کی ممکنہ مداخلت سے متعلق الزامات پر چھاپہ مارا گیا جو انتہائی تشویش ناک ہے۔

اس خبر پر بحث کرنے کے لئے ابھی ہمارے پورٹل پر فری رجسٹر کریں۔

جواب دیں

زمرے