ملائشیا،عدالت کا پاکستانی کو 8 بھینسوں کا جرمانہ

ملائیشیا کی عدالت نے قدیم آباد کاروں کے لیے تضحیک آمیز جملے ادا کرنے کے الزام میں پاکستانی تاجر پر آٹھ بھینسیں اورآٹھ گھنٹیوں(بھینسوں کے گلے میں باندھنے والی)کا جرمانہ عائد کردیا۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ملائیشیا کے جزیرے بورنیو میں کلیڈ وسکوپ کا قبائل آباد ہے جہاں کی مقامی عدالت نے مقامی قوانین اور رسومات کے تحت پاکستانی تاجر عامر علی خان کو سزا سنائی۔عامر علی خان نے مئی اور جون میں قبائلی گروہوں کے بارے میں توہین آمیز تبصرہ کیا تھا جس پر ریاست صباح کی ایک مقامی عدالت نے غیر معمولی جرمانہ ادا کرنے کا حکم دیا۔مقدمے کی سماعت کرنے والے کوٹا ماروڈو کے ضلعی چیف بینٹن ایڈون نے کہا کہ 50 سالہ بزنس مین عامر علی خان کے تبصرے کی ریکارڈنگ سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد مقامی سطح پر بہت غم و غصہ پایا گیا۔انہوں نے کہا کہ وہ ایک مثالی سزا دینا چاہتے ہیں تاکہ دیگر لوگ ان کی طرح کی غلطی نہ کریں۔انہوں نے یہ نہیں بتایا کہ آخر پاکستانی تاجر نے کیا کہا تھا۔اس حوالے سے بتایاگیا کہ پاکستانی تاجر ملائیشیا کے مستقل رہائشی ہیں۔انہوں نے بتایا کہ عامر کو جرمانہ ادا کرنے کے لیے ایک ماہ کی مہلت ہے ورنہ انہیں 940 ڈالر یا 16 ماہ کی جیل یا دونوں سزائیں ہوسکتی ہیں۔