بھارت کے ساتھ کھجوروں کی برآمدات کھولنے کی سفارش

قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی تجارت نے بھارت کے ساتھ کھجوروں کی برآمدات کھولنے کی سفارش کردی ، کھجور کی برآمدات کو بڑھانے کے لیے دیگر ممالک کی منڈیاں تلاش کرنے کی سفارش ، بھارت پاکستانی کھجوروں پر 200 فیصد ڈیوٹیز ختم کرے ۔جمعہ کو سید نوید قمر کی زیر صدارت قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی تجارت کا اجلاس اسلام آباد میں ہوا ، رکن کمیٹی ڈاکٹر نفیسہ شاہ نے کمیٹی کو بتایا کہپاکستان میں سکھر اور خیر پور کھجور کی بہت بڑی مارکیٹ ہیں گذشتہ پانچ سالوں سے کھجور کی برآمد رکی ہوئی ہے کھجور کی برآمدات کو بڑھانے کے لیے پالیسی متعارف کرائی جائے کھجور کی برآمد سے پاکستان ایک ارب ڈالر کا زرمبادلہ کما سکتا ہے پاکستان نے بھارت کو کھجور کی برآمد پر پابندی لگا رکھی ہے بھارت نے پاکستان کی کھجور کی درآمد پر 200 فیصد ڈیوٹی لگا رکھی ہے کھجور کے برآمد کنندگان نے کمیٹی کو بتایا کہ حکومت پاکستان کھجور کی برآمد پر عائد پابندی ہٹائے کھجور کی درآمد کو محدود کیا جائے سیکریٹری تجارت صالح فاروقی نے کمیٹی کو بتایا کہ بھارت نے سافٹا معاہدے کی خلاف ورزی کرتے ہوئے پاکستان کی درآمدات پر 200 فیصد ڈیوٹیز لگادی ہیں جس پر بھارت کے ساتھ تجارت معطل کی گئی ہے نیپال یو اے ای, سنگا پور اور تھائی لینڈ کو کھجور کی برآمد بڑھ رہی ہے ۔کمیٹی نے سفارش کی کہ بھارت کے علاوہ دیگر ممالک میں کھجور کی مارکیٹس تلاش کی جائیں پاکستانی کھجوروں کی برآمدات کو بڑھانے کے لیے ایک ماہ میں پالیسی پیش کرنے کی ہدایت کردی۔ قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی تجارت نے بھارت کے ساتھ کھجوروں کی برآمدات کھولنے کی سفارش کردی ، کھجور کی برآمدات کو بڑھانے کے لیے دیگر ممالک کی منڈیاں تلاش کرنے کی سفارش ، بھارت پاکستانی کھجوروں پر 200 فیصد ڈیوٹیز ختم کرے ۔جمعہ کو سید نوید قمر کی زیر صدارت قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی تجارت کا اجلاس اسلام آباد میں ہوا

اس خبر پر بحث کرنے کے لئے ابھی ہمارے پورٹل پر فری رجسٹر کریں۔

جواب دیں

زمرے