نوبیاہتا جوڑا غیرت کے نام پر قتل

کراچی کے علاقے ناظم آباد میں گزشتہ رات نوبیاہتا جوڑے کو غیرت کے نام پر قتل کیا گیا، گھر والوں کی مرضی کے خلاف ایک ادھیڑ عمر شخص سے خفیہ شادی کرنے پر لڑکی کے بھائیوں نے واردات کی، جنہیں گرفتار کر لیا گیا ہے۔ایس ایس پی سینٹرل عارف اسلم راؤ کے مطابق مقتولہ عائشہ کا اصل نام حنا ہے، جس کا کچھ عرصہ قبل مقتول سلیم سائیں کے اورنگی ٹاؤن میں واقع آستانے پر اپنی ماں کے ساتھ آنا جانا شروع ہوا تھا،جہاں سلیم سائیں نے حنا سے تعلقات استوار کیے اور اسے محبت کے جال میں پھنسا لیا۔ پہلے سے شادی شدہ سلیم سائیں نے 35 سالہ حنا سے اس کے گھر والوں کی مرضی کے خلاف خفیہ شادی کی اور اسے عائشہ بی بی کا نام دے کر کرائے کے مکان میں رکھا ہوا تھا۔ پولیس کے مطابق ملزمان کا کہنا ہے کہ ان کی بہن کے اس عمل سے ان کی خاندان میں بدنامی ہوئی، جس پر انہوں نے ان کے اس خفیہ گھر کا سراغ لگایا اور گزشتہ رات اس وقت واردات کی جب علاقے میں بجلی نہیں تھی۔ پولیس کے مطابق جس مکان میں واردات ہوئی وہاں رہائش پذیر خاتون نے شور شرابے کی آواز سن کر اپنے شوہر کو آگاہ کیا جنہوں نے ملزمان کو فرار ہوتے دیکھا اور ڈکیتی کی واردات سمجھ کر نیچے جا کر دیکھا تو گھر کے دونوں مکین خون میں لت پت پڑے تھے، اسی پڑوسی نے ہی پولیس کو اس دہرے قتل کی واردات سے آگاہ کیا۔ ایس ایس پی عارف اسلم راؤ کے مطابق عینی شاہدین کے بیانات کے بعد رضویہ سوسائٹی پولیس نے 3 گھنٹے میں دہرے قتل کا کیس حل کرلیا اور اس میں ملوث مقتولہ حنا کے 2 بھائیوں آصف اور اشرف کو گرفتار کر لیا۔ انہوں نے یہ بھی بتایا ہے کہ ملزمان آصف اور اشرف نے خاندان کی مرضی کے خلاف شادی کرنے پر جوڑے کو قتل کا اعترف کرلیا ہے، ملزمان کی عمریں 22 اور 24 سال ہیں، مقدمۂ قتل میں انہیں گرفتار کرکے ان سے تفتیش شروع کر دی گئی ہے۔

اس خبر پر بحث کرنے کے لئے ابھی ہمارے پورٹل پر فری رجسٹر کریں۔

جواب دیں

زمرے