ٹی وی پر کشمیر کو بھارت کا حصہ دکھانے پر برطرف پی ٹی وی افسر کی بحالی درخواست مسترد

اسلام آباد ہائیکورٹ نے پی ٹی وی پر کشمیر کو بھارت کا حصہ دکھانے پر برطرف پی ٹی وی افسر کی بحالی درخواست مسترد کر دی ۔ بدھ کو اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس محسن اختر کیانی نے درخواست مسترد کرنے کا مختصر فیصلہ جاری کردیا۔پی ٹی وی کے سابق ہیڈ آف کرنٹ افیئرزاکرم علی نے برطرفی کو چیلنج کیا تھا ۔ اکرم علی کی درخواست میں موقف اختیار کیاگیاکہ 9 جون کو پی ٹی وی کی انکوائری رپورٹ آئی۔شاہ خاور ایڈووکیٹ کے مطابق 2افسران پر مشتمل انکوائری کمیٹی نے شوکاز نوٹس کے بغیر برطرف کیا۔ شاہ خاور ایڈووکیٹ نے کہاکہ 27 سالہ سروس کے حامل پٹیشنر کو سنے بغیر برطرف کرنا خلاف قانون ہے۔شاہ خاور ایڈووکیٹ نے کہاکہ قانونی تقاضوں پورے نہ کرکے بنیادی حقوق کی بھی خلاف ورزی کی گئی، اس معاملے کی براہ راست ذمہ داری ہیڈ آف کرنٹ افیئرز کی نہیں تھی۔ عدالت سے استدعا کی گئی کہ برطرفی کا نوٹی فکیشن غیر قانونی قرار دے کر کالعدم کیا جائے۔وکیل پی ٹی وی حافظ عرفات نے کہاکہ نقشے میں کشمیر کو بھارت کا حصہ دکھانے پر شدید تنقید ہوئی، بنیادی حقوق ریاست کے وجود سے بڑے نہیں ان کی بھی حدود ہے۔وکیل پی ٹی وی حافظ عرفات نے کہا کہ بھارتی اینکرز نے ٹویٹس کے ذریعے اس بلنڈر پر پراپیگنڈہ کیا۔ وکیل پی ٹی وی حافظ عرفات نے کہاکہ جہاں ریاست پر حرف آرہا ہو وہاں ضابطے اور تقاضے بھی بدل جاتے ہیں۔

اس خبر پر بحث کرنے کے لئے ابھی ہمارے پورٹل پر فری رجسٹر کریں۔

جواب دیں

زمرے