ہونڈا گاڑیوں کی قیمتوں میں اضافہ

ہنڈا نے اپنی پوری کار لائن اپ کی قیمت میں اضافے کا اعلان کر دیا۔ تفصیلات کے مطابق گاڑیوں کی کمپنی ہنڈا نے کورونا وائرس کے بعد کاروبار دوبارہ شروع ہونے کی صورت میں قیمتوں میں حیران کن حد تک اضافہ کر دیا ہے۔ بتایا گیا ہے کہ قیمتوں میں 60 ہزار روپے سے 1 لاکھ روپے تک کا اضافہ کر دیا گیا ہے جس کے بعد سب سے سستی گاڑی ہنڈا سٹی اور سب سے مہنگی گاڑی سوک ٹربو ہو گی۔ سستی سے سستی گاڑی کی قیمت بھی تقریباََ 25 لاکھ کے قریب ہے جبکہ ہنڈا کمپنی کی سب سے مہنگی گاڑی کی قیمت تقریباََ 47 لاکھ تک پہنچ گئی ہے۔ بتایا گیا ہے کہ کورونا وائرس کی وجہ سے کمپنی کی گاڑیوں کی فروخت میں کافی نقصان ہو گیا تھا جس کے بعد اب انہوں نے اپنا نقصان پورا کرنے کےلئے قیمتوں میں اضافہ کر دیا ہے خیال رہے کہ اس سے قبل کمپنی نے اپنی موٹرسائیکل کی قیمتوں میں بھی اضافہ کر دیا تھا۔ بتایا گیا تھا کہ ہنڈا سی ڈی 70 کی قیمت 1400 روپے، ہنڈا ڈریم 2000 روپے، ہنڈرا پرائیڈر 2000 روہے جبکہ سی جی ون ٹو فائیو 3000 جبکہ سی بی 150 کی قیمت میں 20 ہزار روپے اضافہ کر دیا گیا ہے۔ نئی قیمتوں کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ ہنڈا ڈریم 2000 روپے اضافے کے بعد 82 ہزار 500 کی ہو گئی ہے، اس کے علاوہ سی جی ون ٹو فائیو 2400 مہنگا کر دیا گیاہے جبکہ ہنڈرا پرائیڈر 2000 روپے اضافے کے بعد 107500 میں ملا کرے گا۔ اس حوالے سے مزید بتایا گیا ہے کہ نئی قیمتوں کا اطلاق کل یکم جولائی سے کیا جا رہا ہے۔ اس حوالے سے مزید بتایا گیا ہے کہ مقامی کرنسی کی قیمت میں کمی کے ساتھ کمپنی کو اپنی مارکیٹنگ مہم کے لئے اس کی قیمت میں اضافہ کرنے کی ضرورت پیش آئی ہے۔ تاہم یہ بھی بتایا گیا ہے کہ ہونڈا اٹلس اور پاکستان کے دیگر طاقتور کار سازوں کے ساتھ مسئلہ یہ ہے کہ وہ مصنوع کی حد یا معیار میں کسی اضافہ کے بغیر ، قیمت میں اضافہ کرتے رہتے ہیں

اس خبر پر بحث کرنے کے لئے ابھی ہمارے پورٹل پر فری رجسٹر کریں۔

جواب دیں

زمرے