پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں ٹریڈنگ کا چار سالہ ریکارڈٹوٹ گیا

پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں ٹریڈنگ کا چار سالہ ریکارڈ ٹوٹ گیا۔ ہنڈرڈ انڈیکس میں دو سو تراسی پوائنٹس کا اضافہ ہوا اور اعشاریہ سات ایک فیصد اضافے کے ساتھ چالیس ہزار ایک سو چھیاسٹھ کی سطح پر بند ہوا۔اسٹاک مارکیٹ میں چوبیس ارب مالیت کے بیاسی کروڑ شیئرز کا کاروبار کیا گیا، آخری بار اسٹاک ایکسچینج میں تیزی اکتوبر دو ہزار سولہ میں دیکھی گئی تھی۔ دوسری جانب ورلڈ بینک کی جانب سے پاکستان کو 50 کروڑ 55 لاکھ ڈالرز موصول ہونے کے بعد ملکی زرمبادلہ کے ذخائر 19 ارب 56 کروڑ ڈالرز کیسطح پر پہنچ گئے ہیں۔اسٹیٹ بینک کے مطابق 30 جولائی کو ختم ہونے والے ہفتے پر ملکی زرمبادلہ کے ذخائر 65 کروڑ 7 لاکھ ڈالرز بڑھ کر 19 ارب 56 کروڑ 29 لاکھ ڈالرز کی سطح پر رہے،اس دوران مرکزی بینک کے ذخائر 56 کروڑ 66 لاکھ ڈالرز کے اضافے سے 12 ارب 54 کروڑ 22 لاکھ ڈالرز اور کمرشل بینکوں کے ذخائر 8 کروڑ 41 لاکھ ڈالر کے اضافے سے 7 ارب 2 کروڑ ڈالرز کی سطح پر رہے۔مرکزی بینک کو گزشتہ ہفتے عالمی بینک سے 50 کروڑ 55 لاکھ ڈالرز موصول ہوئے تھے جبکہ اس کے علاوہ انفلوز بھی دیکھے گئے۔