کل جماعتی حریت کانفرنس نے رہنما شیخ عبدالعزیز کی شہادت پر وادی میں مکمل ہڑتال کی کال دے دی

سری نگر(ویب ڈیسک) کل جماعتی حریت کانفرنس نے رہنما شیخ عبدالعزیز کی شہادت پر وادی میں مکمل ہڑتال کی کال دے دی، شیخ عبدالعزیز کو2008 میں11اگست کو بھارتی فورسز نے شہید کیا تھا۔تفصیلات کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز باز نہ آئی ، کلگام میں قابض فورسز کا نام نہاد سرچ آپریشن بھی جاری ہے۔کشمیرمیڈیا سروس کا کہنا ہے کہ کل جماعتی حریت کانفرنس نے وادی میں 11اگست کو مکمل ہڑتال کی کال دے دی ہے ، ہڑتال کی کال حریت رہنما شیخ عبدالعزیز کی شہادت پر دی گئی۔بھارتی فورسز نے 2008 میں11 اگست شیخ عبدالعزیز کو اس وقت شہید کیا تھا، جب وہ وادیٔ کشمیر کی اقتصادی ناکہ بندی کے خلاف سری نگر سے کنٹرول لائن کی طرف ایک جلوس کی قیادت کر رہے تھے۔خیال رہے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی غیر قانونی محاصرے کو ایک سال مکمل ہوگیا ہے ، وادی میں ایک سال میں معاشی سرگرمیاں ٹھپ ہوکر رہ گئیں ، مقبوضہ کشمیر میں سیاحت شدید متاثر ہے اور بحالی کے امکان بھی کم ہے۔کشمیر میڈیا سروس کے مطابق ایک سال سے مقبوضہ کشمیر میں لوگوں کی زندگی مزید اجیرن ہے۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق ملک بھر میں بازار اور ریسٹورینٹس کھل گئے،شہریوں نے احتیاطی تدابیر ہوا میں اڑادیں۔ قومی رابطہ کمیٹی ( این سی سی) کے فیصلے کے تحت آج سے ملک بھر میں لاک ڈاؤن میں مزید نرمی کردی گئی ہے تاہم شہریوں کی جانب سے کورونا سے بچاؤ کے لیے ضابطہ کار (ایس او پیز ) پر بالکل عمل نہیں کیا جارہا۔کراچی، لاہور،اسلام آباد، پشاور اور کوئٹہ سمیت ملک بھر میں بازار اور شاپنگ مالز کھل گئے ہیں جب کہ ریسٹورینٹ، کیفے اور سینما کھولنے کی بھی اجازت دے دی گئی ہے۔حکومت کی جانب سے واضح ہدایات کے باوجود پہلے ہی دن شہریوں نے احتیاطی تدابیر ہوا میں اڑادیں اور مارکیٹوں میں خواتین اور بچوں کا رش لگ گیا۔بڑے ریسٹورنٹس اور فوڈ کورٹس میں میزوں پر سماجی فاصلہ نظر آیا،لیکن ڈھابوں پر کھانے پینے کے شوقین افراد نے سب کچھ حلوہ پوری، نہاری اور چائے کے شوق میں بھلادیا۔خیال رہے کہ ملک بھر میں آج بھی کورونا سے مزید 13 اموات ہوئی ہیں اور 435 نئے کیسز سامنے آئے ہیں۔یاد رہے کہ رواں برس مارچ میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے ملک بھر میں لاک ڈاؤن کردیا گیا تھا تاہم اب کیسز میں کمی کے بعد بتدریج مختلف شعبوں کو کھولا جارہا ہے۔