مریم نواز کی اراضی کیس میں نیب پیشی کے موقع پر کارکنوں اور پولیس کے درمیان شدید جھڑپ

لاہور(نیوز ڈیسک)پاکستان مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز کی اراضی کیس میں نیب پیشی کے موقع پر کارکنوں اور پولیس کے درمیان شدید جھڑپ ہو گئی اور علاقہ میدان جنگ بنا رہا ، کشیدہ حالات کے باعث نیب نے مریم نواز کی پیشی منسوخ کر کے انہیں باہر سے ہی واپس بھجوا دیا گیا ۔ ایک دوسرے پر پتھرائو ، پولیس کی جانب سے لاٹھی چارج اور آنسو گیس کی شیلنگ سے لیگی کارکنان سمیت کئی پولیس اہلکار بھی زخمی ہوئے جبکہ صحافی اور کیمرہ مین بھی پتھرائو اور شیلنگ کی زد میں آگئے، مشتعل لیگی کارکنان نے نیب ہیڈ کوارٹر کی طرف جانے والے راستے پر لگائی گئی تمام رکاوٹیں گرا دیں اور حکومت اورپولیس کے خلاف نعرے بازی کرتے رہے لیگی رہنمائوںنے الزام عائد کیا ہے کہ جان بوجھ کر امن و امان کی صورتحال پیدا کی گئی اور اس کی تمام تر ذمہ داری حکومت اور پولیس پر عائد ہوتی ہے ۔ تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز گزشتہ روز پارٹی رہنمائوں اور کارکنوں کے بڑے جلوس میں جاتی امراء سے نیب کے ٹھوکر نیاز بیگ پر واقعہ ہیڈ کوارٹر میں پیشی کیلئے روانہ ہوئیں ۔ پولیس نے مسلم لیگ (ن) کی قیادت کی جانب سے لیگی کارکنوں کو جمع ہونے کی کال کے پیش سکیورٹی کے غیر معمولی انتظامات کئے اور کئی شاہراہوں کو مختلف مقامات پر بیرئیر زاور خار دار تاریں لگا کر بند کر دیا گیا جبکہ نیب ہیڈ کوارٹر کے اطراف میں بھی باہر بیرئیر اور خار دار تاریں لگا کر پولیس کی بھاری نفری تعینات کر دی گئی ۔ مسلم لیگ (ن) کے کارکنوں کی ایک بڑی تعداد صبح سویرے ہی نیب ہیڈ کوارٹر کے باہر پہنچ گئی تھی۔