ہیڈ کوچ اور چیف سلیکٹر مصباح الحق غصہ میں آ گے کھری کھری سنا دیں

لاہور(ویب ڈیسک) قومی کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ اور چیف سلیکٹر مصباح الحق نے کہا ہے کہ بلے باز حیدر علی کو کوئی اور نہیں ہم ہی لے کر آئے ہیں جس کے لیے باضابطہ طریقہ کار اپنایا گیا اور کوشش ہے کہ سینئر کے ہمراہ جونیئر کھلاڑیوں کو کھلائیں اور ٹیم کو آگے لے کر جائیں۔لاہور میں پریس کانفرنس کے دوران مصباح الحق نے کہا کہ ’میرا خیال ہے کہ یہ حیدر علی کی پہلی سیریز ہے اس میں بھی دو میچز کے بعد چانس ملا اور ہماری کوشش ہے کہ ہر کسی کو پلان کے مطابق موقع دیں۔انہوں نے کہا ’مستقبل میں سینئر کے ہمراہ جونیئر کھلاڑیوں کو مستقل بنیادوں پر چانس ملے گا‘۔ایک سوال کے جواب میں مصباح الحق نے ٹی 20 کے حوالے سے کہا کہ ’عام تاثر ہے کہ جس طرح بین الاقوامی سطح پر کرکٹ ہورہی ہے پاکستان کے پاس ایسے کھلاڑی نہیں ہیں‘۔انہوں نے کہا کہ ’میرا خیال ہے کہ ہم ٹی 20 میں درست سمت میں جارہے ہیں بس اس حکمت عملی کو برقرار رکھنے کی ضرورت ہے‘۔مصباح الحق نے انگلینڈ کے خلاف دو مرتبہ 190 سے زائد رنز اسکور کرنے کو اہم قرار دیتے ہوئے کہا کہ’ہم درست سمت پر گامزن ہیں جسے مزید مستقل بنیاد پر قائم رکھنے کی ضرورت ہے‘۔انہوں نے کہا کہ ’ہم نئےآ نے والے کھلاڑیوں بشمول باؤلر پر ٹھیک وقت لگا رہے ہیں اور بہتری کی طرف جائیں گے‘۔قومی کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ اور چیف سلیکٹر مصباح الحق نے کہا کہ ’بہتری کی گنجائش ہمیشہ رہتی ہے، جس طرح کی کرکٹ ہورہی ہے اس کے تناظر میں ہماری کارکردگی کے نتائج وہ نہیں ہیں جس کی خواہش کی جارہی ہے لیکن نتائج کے حصول کے لیے کی جانے والی کوششوں سے مطمین ہوں‘۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نےکہا کہ وہ انگلینڈ میں انتہائی اہم میچز میں مصروف تھے اس دوران ڈومیسٹک کرکٹ کے لیے توجہ نہیں دے سکے تھے۔مصباح الحق نے کہا کہ ’اس حوالے سے میں ندیم خان کے ساتھ بیٹھ کر لائحہ عمل تیار کروں گا‘۔