مہنگائی کی شرح میں0اعشاریہ37 فیصد اضافہ مہنگائی کی شرح9 اعشاریہ 04 فیصد کی سطح پر پہنچ گئی

کراچی(نیوز ڈیسک) ستمبر ستمگر بن گیا،وزیراعظم عمران خان کے نوٹس کے باوجود مہنگائی کی شرح میں اضافہ ہوا اور ستمبر کے پہلے ہفتے میں مہنگائی کی شرح میں0اعشاریہ 37 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔تفصیلات کے مطابق شماریات بیورو کی جانب سے مہنگائی کی ہفتہ وار اعدادوشمار جاری کر دیے جس کے مطابق ایک ہفتے کیدوران مہنگائی کی شرح میں0اعشاریہ37 فیصد اضافہ ہو کر مہنگائی کی شرح9 اعشاریہ 04 فیصد کی سطح پر پہنچ گئی،17 سے 23 ہزار ماہانہ کمانے والوں کیلئے مہنگائی کی شرح میں 11اعشاریہ 70فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔اور ایک ہفتے کے دوران 22 اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا، ایک ہفتے کے دوران 6 اشیا ضروریہ کی قیمتوں میں معمولی کمی ریکارڈ جبکہ رواں ہفتے 23اشیا ضروریہ کی قیمتوں میں استحکام رہا۔ایک ہفتے کے دوران دالیں،مصالحہ جات،انڈے مہنگے ہو گئے جبکہ ایک ہفتے کے دوران گندم کا آٹا،برائلر مرغی بھی مہنگی ہوئی،رواں ہفتے کے دوران انڈے فی درجن 4روپے مہنگے ہوئے اور دو ہفتوں کے دوران انڈوں کی فی درجن قیمت میں 14روپے تک اضافہ ہوا، رواں ہفتے کے دوران دال مونگ ساڑھے 13،دال ماش 7روپے 70پیسے فی کلو مہنگی ہوئی جبکہ گندم کے 20 کلو آٹے کے تھیلے کی قیمت میں 15 روپے کا اضافہ ہوا۔دستاویز میں مزید کہا گیا کہ رواں ہفتے کے دوران برائلر مرغی فی کلو 22 روپے مہنگی ہو گئی جبکہ رواں ہفتے کے دوران بکرے کا گوشت 6 روپے فی کلو مہنگا ہوا۔رواں ہفتے کے دوران تازہ دودھ ،دہی ،خشک دودھ بھی مہنگا ہو گیا۔