آئی جی پنجاب انعام غنی کے جعلی ٹویٹر اکاؤنٹ کا انکشاف جعلی اکاؤنٹ کو آئی جی کے نام سے منسوب کرکے ٹویٹ کی گئی

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) نئے تعینات ہونے والے انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب انعام غنی کے جعلی ٹویٹر اکاؤنٹ کا انکشاف ہوا ہے جبکہ جعلی ٹویٹر اکاؤنٹ سے ٹویٹ بھی کی گئی۔ آئی جی نے اپنے جعلی ٹویٹر اکاؤنٹ بارے بات کرتے ہوئے کہا کہ جعلی اکاؤنٹ کو میرے نام سے منسوب کرکے ٹویٹ کی گئی۔ متعلقہ ادارہ جعلی اکاؤنٹ بنانے والوں کیخلاف کارروائی کرے۔آئی جی پنجاب نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ متاثرہ خاتون کے اے ٹی ایم استعمال کرنے والے دو افراد کی گرفتاری کی خبر جھوٹی ہے۔ انہوں نے کہاکہ میرے نام سے بنائے گئے ٹوئٹر اکاؤنٹ سے یا کسی اور طریقے سے سوشل میڈیا پر جتنی خبریں چل رہی ہیں سب جعلی ہیں۔ کیس پر جو بھی پیش رفت ہو گی ہم میڈیا سے خود شیئر کریں گے یا ہمارا پبلک ریلیشن کا محکمہ آپ کو بتائے گا۔ ڈی این اے میچ ہو گئے، انگوٹھی مل گئی، اے ٹی ایم استعمال ہوئے اس طرح کی جعلی خبریں شیئر کرنے سے گریز کریں۔ انعام غنی نے میڈیا نمائندوں سے کہا کہ جو معلومات بھی آپ کو ملتی ہیں براہ مہربانی مجھ سے اس کی ایک بار تصدیق ضرور کر لیں۔ جبکہ دوسری طرف تین روز قبل ہونے والے لاہور سیالکوٹ موٹر وے افسوس ناک واقعہ کے بعد وہاں سے گزرنے والے شہریوں کی بڑی تعداد اپنی گاڑیاں روک روک کر جائے وقوعہ کا جائزہ لینے لگی، جس سے جائے وقوعہ پر شواہد کے ضائع ہونے کے خدشات پیدا ہو گئے ہیں جبکہ دوسری طرف جائے وقوعہ پر تعینات پولیس بھی شہریوں کو وہاں اکٹھا ہونے سے روکنے میں ناکام رہی ہے، اس حوالے سے آئی جی پولیس پنجاب انعام غنی نے نوٹس لیتے ہوئے شہریوں سے اپیل کی ہے کہ جائے وقوعہ پر شواہد کو محفوظ رکھنے کے لئے شہری وہاں پر نہ جائیں اور وہاں رکنے کی