قرنطینہ مراکز میں کرپشن، نیب حرکت میں آگئی

قومی احتساب بیورو ( نیب) لاہورنے قرنطینہ مراکز میں مبینہ کرپشن کی شکایات پر تحقیقات کا آغاز کردیا، پنجاب حکومت کی جانب سے ایکسپو سینٹر لاہور اورکالا شاہ کاکو میں یو ای ٹی کیمپس میں قرنطینہ مراکز بنائے گئے ۔نیب ذرائع کے مطابق مذکورہ مراکز میں ٹینڈرز، بڈنگ اور سامان کی خریداری میں کرپشن کی شکایات موصول ہوئی ہیں، ان مراکز پر پنجاب حکومت، محکمہ صحت اور ضلعی انتظامیہ سے تحقیقات کی جارہی ہیں۔ مذکورہ مراکز کے ٹھیکوں میں من پسند افراد کو نوازنے کے شواہد بھی موصول ہوئے ہیں، نیب کو شکایت کی گئی ہے کہ قرنطینہ مراکز میں مہیا کی گئی اشیا ء مہنگے داموں خریدی گئیں، لکٹری کے کیبن، شیشے کے دروازے، لوہے کے بیڈز، بیڈ شیٹس کا تخمینے کا ریکارڈ مانگا گیا ہے،گدے، تکیے، کمبل، کرسیوں، میزوں، کنوپیوں اور پنکھوں سمیت دیگر اشیا ء کی خریداری سے متعلق بھی تحقیقات کی جائیں گی ۔ نیب ذرائع کے مطابق اشیا ء کی خریداری کے بعد کیے گئے آڈٹ کی رپورٹس بھی طلب کر لی گئی ہیں۔ایکسپو سینٹر میں 4 ہالز میں 1050 بستروں پر مشتمل قرنطینہ مرکز بنایا گیا جبکہ کالا شاہ کاکو میں یو ای ٹی کے کیمپس میں25 بستروں پر مشتمل سینٹر بیایا گیا تھا۔

جواب دیں