روئی کی قیمتوں میں نمایاں کمی

مقامی کاٹن مارکیٹ میں گزشتہ ہفتے کے دوران ٹیکسٹائل و اسپننگ ملز کی جانب سے روئی کی خریداری میں نسبتا کم دلچسپی اور جنرز کی جانب سے روئی کی گھبراہٹ بھری فروخت کے سبب روئی کے بھا ؤمیں فی من 400 تا 500 روپے کی نمایاں کمی واقع ہوئی بھا ؤکم ہونے کی ایک بڑی وجہ یہ بھی بتائی جاتی ہے کہ بارشوں کی وجہ سے فی الحال تیار ہونے والی روئی کی کوالٹی خراب ہے خصوصی طور پر صوبہ سندھ میں بارشوں کے سبب روئی کی کوالٹی زیادہ متاثر ہوئی ہے صوبہ سندھ میں ہلکی کوالٹی کی روئی کا بھاؤ کم ہوکر فی من 7500 روپے کے بھاؤ تک بک چکی تھی۔ صوبہ پنجاب میں روئی کی کوالٹی نسبتا اچھی ہے وہاں روئی کا بھاؤ نسبتا ٹھیک کہا جاسکتا ہے۔ صوبہ سندھ میں روئی کا بھا ؤکوالٹی کے حساب سے فی من 7500 تا 8200 روپے پھٹی کا بھا ؤفی 40 کلو 3000 تا 3800 روپے جبکہ بنولہ فی من 1550 تا 1600 روپے رہا جبکہ صوبہ پنجاب میں روئی کا بھاؤ فی من 8500 تا 8650 روپے پھٹی کا بھا ؤفی 40 کلو 3300 تا 4000 روپے بنولہ کا بھا ؤفی من 1700 تا 1750 روپے رہا صوبہ بلوچستان میں روئی کا بھاؤ فی من 8200 تا 8300 روپے پھٹی کا بھاؤ فی 40 کوالٹی کے حساب سے 4000 تا 4800 روپے رہا۔ کراچی کاٹن ایسوسی ایشن کی اسپاٹ ریٹ کمیٹی نے اسپاٹ ریٹ میں فی من 350 روپے کی کمی کرکے اسپاٹ ریٹ فی من 8550 روپے کے بھاؤ پر بند کیا۔کراچی کاٹن بروکرز فورم کے چیئرمین نسیم عثمان نے بتایا کہ بین الاقوامی کاٹن مارکیٹوں میں روئی کا بھاؤ ملا جلا رہا۔ نیویارک کاٹن کے وعدے کے بھاؤ میں ملا جلا رجحان رہا۔ چین اور امریکا کے مابین کشیدگی جاری ہے جبکہ ڈالر کے بھاؤ میں اتار چڑھا کے سبب بھی نیویارک کاٹن کے وعدے کے بھاؤ میں ردوبدل ہوتا رہا۔