سانحہ موٹروے، ملزمان واردات کے بعد کار میں 1000 روپے چھوڑ کر گئے

سانحہ گجر پورہ کے حوالے سے خاتون صحافی فریحہ ادریس کا انکشاف، ملزمان واردات کے بعد گاڑی میں 1 ہزار روپے چھوڑ کر گئے، متاثرہ خاتون نے پولیس سے رابطہ کر کے لوکیشن شیئر کی، 1 ہزار روپے کا پٹرول مانگا، 2 گھنٹے انتظار کے بعد پولیس کی بجائے ڈاکو آگئے، زیادتی واقعے کے بعد مجرمان جاتے ہوئے گاڑی کے ڈیش بورڈ پر 1 ہزار روپے کا نوٹ چھوڑ کر گئے۔ تفصیلات کے مطابق خاتون صحافی اور اینکر پرسن فریحہ ادریس کی جانب سے نجی ٹی وی چینل کے پروگرام سے گفتگو کرتے ہوئے بڑا انکشاف کیا گیا ہے۔ فریحہ ادریس کا بتانا ہے کہ موٹروے پر جب متاثرہ خاتون کا پٹرول ختم ہوا تو انہوں نے پولیس کو کال کر کے ایک ہزار روپے کا پٹرول مانگا تھا، جبکہ وہاں واردات ہوئی تو مجرمان واپس جاتے ہوئے 1 ہزار روپے کا نوٹ گاڑی کے ڈیش بورڈ پر چھوڑ کر گئے۔ یعنی متاثرہ خاتون نے پولیس سے جتنی رقم کا پٹرول مانگا تھا، ملزمان واردات کے بعد گاڑی کے ڈیش بورڈ پر اتنی ہی رقم چھوڑ کر گئے۔ فریحہ ادریس کا بتانا ہے کہ وہ متاثرہ خاتون سے رابطے میں ہیں۔ خاتون کی گاڑی خراب ہوئی تو انہوں نے پولیس سے رابطہ کیا لیکن 2 گھنٹے تک وہاں کوئی نہیں آیا۔ خاتون نے بذریعہ وٹس ایپ پولیس سے اپنی لوکیشن بھی شیئر کی تھی۔ مدد کیلئے رابطہ کیے جانے پر پولیس نے خود خاتون سے لوکیشن کی تفصیلات مانگی تھیں تاہم مدد کیلئے کوئی نہیں آیا۔ خاتون نے باقاعدہ ویڈیو بھی بنائی کہ جب انہوں نے مدد طلب کی تو اس کے 2 گھنٹے تک پولیس نہیں آئی۔ خاتون نے اب دوران تفتیش پولیس سے وہ نمبر بھی شیئر کیا ہے جس پر لوکیشن شیئر کی گئی تھی۔ جبکہ متاثرہ خاتون نے تصدیق کی ہے کہ گرفتار ملزم شفقت نے دوران تفتیش جو تفصیلات بتائی ہیں وہ کافی حد تک درست ہیں۔ واضح رہے کہ سانحہ گجر پورہ کا شفقت نامی ایک ملزم گرفتار کیا جا چکا، جبکہ مرکزی ملزم عابد کی گرفتاری کیلئے کوششیں جاری ہیں۔ پنجاب پولیس اور صوبائی حکومت کا دعویٰ ہے کہ ملزم عابد علی جلد پولیس کی تحویل میں ہوگا۔

جواب دیں