وزیراعلیٰ سندھ مرادعلی شاہ کیخلاف ریفرنس میں نیب کو وعدہ معاف گواہ مل گیا

وزیراعلی سندھ مرادعلی شاہ کیخلاف ریفرنس میں نیب کووعدہ معاف گواہ مل گیا ہے۔ نیب کی تفتیش میں ٹھیکیدار امجد حسین نے اہم معلومات دی ہے۔ نیب نے مرادعلی شاہ کیخلاف مجموعی طور پر 125 گواہان تیار کرلئے ہیں۔دستاویزات کے مطابق پرائیویٹکنٹریکٹرامجدحسین وعدہ معاف گواہ بن گئے ہیں۔ انہوں نے نیب کو بتایا ہے کہ ٹیکنومین کائناٹکس نامی کمپنی کو بولی کے عمل میں ہیرا پھیری سے نوازا جاتا رہا۔ بولی کا عمل مکمل کرنے والی کمیٹی کے رکن اورممبر نیپرا محمود الحسن جانتے تھے کہ مراد علی شاہ سب کچھ کنٹرول کر رہے ہیں۔ انھوں نے بتایا کہ نوری آباد پلانٹس کو صرف 7کلومیٹرکی لائن سے حیسکو کے ساتھ ملایا جا سکتا تھا لیکن 85 کلومیٹر کی لائن کا ٹھیکہ دیکر کے الیکٹرک سے ملایا گیا۔ نیب ریفرنس کے مطابق وعدہ معاف گواہ سمیت کل 125 گواہان عدالت میں پیش ہوں گے۔نیب کی جانب سے ٹیکنو مین کائناٹکس نامی کمپنی کو مرادعلی شاہ کی منظور نظر بتایا گیا ہے۔ جے آئی ٹی رپورٹ میں اسی کمپنی کیجانب سے33 ملین ڈالر منی لانڈرنگ سے دبئی بھیجنے کا انکشاف بھی موجود ہے۔فرنٹ مین کا کردار ادا کرنے والے اسی کمپنی کے2 ڈائریکٹرزاعتراف جرم کے بعد 2.5 ارب روپے کی پلی بارگین کرچکے ہیں۔واضح رہے کہ نیب ریفرنس میں وزیراعلیسندھ مرادعلی شاہ کیخلاف سنگین الزامات عائد کئے گئے ہیں اورکرپشن کی 12 میں سے 5 شقوں کے تحت مراد علی شاہ کو مجرم ٹھہرایا گیا ہے۔ریفرنس میں الزام عائد کیا گیا ہے کہ اومنی گروپ سے متعلق نوری آباد میں پاورپلانٹس لگانے کا منصوبہ بغیر فیزیبلٹی منظور کرایا گیا اورقومی خزانے کے8 ارب روپے جھونک دیئے گئے۔ مراد علی شاہ نے بطور وزیر توانائی و خزانہ اختیارات کاغلط استعمال کیا اور عبدالغنی مجید منصوبہ ساز جبکہ مراد علی شاہ سہولت کار تھے۔مراد علی شاہ نے کابینہ کے سامنے اس منصوبے کو عوامی فلاح کا قرار دیا تھا۔ریفرنس میں یہ بھیکہا گیا ہے کہ مراد علی شاہ نے بطور وزیر توانائی و خزانہ اختیارات کا غلط استعمال کیا اوراومنی گروپ کے ہی کنسلٹنٹ خورشید جمالی کے مشورے پر منصوبوں کا آغاز ہوا اور پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ کی آڑ میں 8 ارب روپے کے علاوہ 2 کمپنیوں کو 3 ارب روپے کا قرض مراد علی شاہ نے جاری کروایا۔ریفرنس میں سابق سیکرٹری توانائی آغا واصف بھی شریک ملزم نامزدکئے گئے ہیں۔ریفرنس میں نوری آباد پلانٹ کو کے الیکٹرک گرڈ سے ملانے کیلئے ٹرانسمیشن لائن کا ٹھیکہ بھی غیرشفاف بولی سیدینے کاالزام عائد کیا گیا۔