ملکی زرمبادلہ کے مجموعی ذخائرمیں ایک ہفتے میں نمایاں کمی

ملکی زرمبادلہ کے مجموعی ذخائر ایک ہفتے کے دوران39کروڑ87لاکھ ڈالر کی کمی سے20ارب12کروڑ3لاکھ ڈالر کی سطح پر آگئے۔اسٹیٹ بینک کے جاری اعدادو شمار کے مطابق 15جنوری کو ختم ہونے والے ہفتے کے دوران ملکی مجموعی زرمبادلہ کے ذخائر 20 ارب51 کروڑ90 لاکھ ڈالرسے گھٹ کر20 ارب12 کروڑ3 لاکھ ڈالر ہوگئے جن میں مرکزی بینک کے ذخائر38 کروڑ 62لاکھ ڈالر کی کمی سے 13ارب 40کروڑ ڈالر سے گھٹ کر13 ارب1 کروڑ38 لاکھ ڈالر جبکہ کمرشل بینکوں کے ذخائر1 کروڑ25 لاکھ ڈالرکی کمی سے 7ارب 10 کروڑ65 لاکھ ڈالرز کی سطح پرآ گئے۔ دوسری جانب پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں جمعرات کو تیزی کا رجحان غالب رہا جس کے نتیجے میں کے ایس ای 100 انڈیکس 307.52 پوائنٹس کے اضافے سے45984.4 کی سطح پر پہنچ گیا اور 54.30 فیصد کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا جس سے مارکیٹ کی سرمایہ کاری مالیت 57 ارب8 کروڑ3 لاکھ روپے بڑھ گئی جب کہ حصص کی لین دین کے لحاظ سے کاروباری حجم بھی بدھ کی نسبت 27.22 فیصد زائد رہا۔پاکستان اسٹاک ایکس چینج میں گزشتہ روزٹریڈنگ کا آغاز مثبت زون میں ہوا اور سرمایہ کاروں کی جانب سے منافع بخش کمپنیوں کے شیئرز کی خریداری میں دلچسپی کے باعث تیزی رہی جس کے نتیجے میں کے ایس ای 100 انڈیکس46 ہزار کی نفسیاتی حد کو بحال کرتے ہوئے 46142 پوائنٹس کی بلند سطح پر پہنچ گیا تاہم بعد ازاں حصص فروخت کا دباوٗ بڑھنے کے سبب46 ہزار کی نفسیاتی حد برقرار نہ رہ سکی لیکن تیزی کا رجحان غالب رہا اورکاروبار کے اختتام پرکے ایس ای 100 انڈیکس 307.52 پوائنٹس کے اضافے سے 45984.46 پوائنٹس پر بند ہوا۔،اسی طرح کے ایس ای 30 انڈیکس 122.61 پوائنٹس کے اضافے سے19148.16 پوائنٹس اور کے ایس ای آل شیئرز انڈیکس 191.45 پوائنٹس کے اضافے سے 31913.86 پوائنٹس کی سطح پرپہنچ گیا۔ گزشتہ روز مجموعی طور پر 418 کمپنیوں کا کاروبار ہوا جس میں سے 227 کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ 173 میں کمی اور 18 کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں استحکام رہا۔ تیزی کے باعث مارکیٹ کی سرمایہ کاری مالیت 82 کھرب77 ارب24 کروڑ 61لاکھ روپے سے بڑھ کر 83 کھرب 34 ارب 32 کروڑ 64لاکھ روپے ہوگئی۔قیمتوں میں اتار چڑھاؤ کے اعتبا ر سے رفحان میظ کے حصص کی قیمت 579روپے کے اضافے سے 10479 روپے اور آئی سی آئی پاکستان 39.88 روپے کے اضافے سے842.05روپے ہوگئی جب کہ گیٹرن اندسٹریز 19.99 روپے کی کمی سے 600روپے اورمری پٹرولیم کے حصص 17.28روپے کی کمی سے 1450.60روپے ہوگئی۔