پی آئی اے نے ملائشیا سے اپنا جہاز چھڑوانے کیلے بڑی رقم ادا کر دی

لندن ( ویب ڈیسک ) تازہ ترین خبروں کے مطابق پی آئی اے نے لندن ہائی کورٹ میں ایک جج کو بتایا ہے کہ اس نے ڈبلن میں قائم ایرکیپ کے ذریعہ لیز پرلیئے گئے دو جیٹ طیاروں سے متعلق کیس میں پیری گرائن ایوی ایشن چارلی لمیٹڈ کو تقریبا 7 ملین امریکی ڈالر ادا کر دیئے ہیں۔یاد رہے کہ اس کیس میں ملائیشیا کے حکام نے گذشتہ جمعہ کو کوالالمپور ایئر پورٹ پر پی آئی اے کے بوئنگ 777 کو طیارے کے لیز واجبات کی عدم ادائیگی پر ملائشیا کی ایک مقامی عدالت کے حکم پرقبضے میں لے لیاتھا۔ پاکستان کی قومی ائیرلائن اور دوسرے فریق ونوں کے وکلاء نے اس توقع پر گزشتہ روز سماعت اگلی تاریخ تک ملتوی ہونے پر اتفاق کیا کہ کسی معاہدے کے ذریعے پی آئی اے کے خلاف کوئی حکم جاری کیے بغیرپوری رقم ادا کر دی جائے گی ۔ سماعت پر ایئر لائن کے وکیلایرن ہچنس نے جج سےسماعت ملتوی کرنے کیلئے آن لائن درخواست کی تاکہ فریقین لیز ، کرایہ ، سود ، لیز اور ادائیگی کے معاملات طے کرلیں۔جبکہ ایئرلائن کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ان کا مؤقف یہ ہے کہ مدعا علیہ (پی آئی اے) نے آج رقم ادا کر دی ہے۔ عدالت کو بتایا گیا کہ پی آئی اے 580000 ڈالر ماہانہ طیارے کی مد میں مقروض تھی لیکن اس نے ادائیگی نہیں کی اور قانونی چارہ جوئی شروع کردی۔لیزنگ کمپنی نے پی آئی اے کے خلاف اکتوبر 2020 میں لیز کی ادائیگی میں ناکامی پر لندن ہائی کورٹ میں ایک کیسدائر کر دیا تھا جس کی مالیت تقریبا 14 ملین ڈالر تھی اور وہ 6 ماہ کے عرصے سے زیر التواء تھی۔