فارمز ہاؤسز کے خلاف کارروائی قانونی تھی اسے سیاسی رنگ نہ دیا جائے، پیپلز پارٹی

وزیر تعلیم سندھ سعید غنی نے کہا ہے کہ ملیر میں فارمز ہاؤسز کے خلاف کارروائی قانونی تھی، پی ٹی آئی کی صوبائی اور وفاقی قیادت کی جانب سے اس کارروائی کو سیاسی رنگ دینے کی مذمت کرتے ہیں۔ ہفتہ کو اپنے کیمپ آفس میں صوبائی وزیر اینٹی کرپشن جام اکرام اللہ دھاریجو کے ساتھ پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ 30 سالہ زمین پولٹری فارم اور زراعت کے مقصد سے لیز کی جاتی ہے اور اس پر فارم ہاؤسز، ہاؤسنگ اسکیم یا گھروں کی تعمیر غیر قانونی ہے، بورڈ آف ریونیو کو اختیار ہے کہ وہ ان زمینوں کی لیز کی میعاد ہونے کے باوجود ان پر غیر قانونی کام کے خلاف کارروائی کرے۔ سعید غنی نے کہا کہ پی ٹی آئی کے نااہل اپوزیشن لیڈر یہ بتائیں کہ یہ فارم ہاؤسز کس طرح قانونی تھے؟ یہ تاثر غلط ہے کہ کارروائی صرف ان دو فارم ہاؤسز کے خلاف کی گئی، حقیقت یہ ہے کہ ڈسٹرکٹ ملیر کے دو دیہہ میں ہزاروں ایکڑ ایسی زمینوں کے خلاف کارروائی کی جارہی ہے، جہاں یا تو 30 سالہ لیز ختم ہوگئی ہے یا پھران زمینوں کو جن مقاصد کے لیے حاصل کیا گیا ہے وہاں اس کے بر خلاف کام جاری تھا۔