ن لیگ کو بڑا جھٹکا سینیئر لیگی رہنما نے اوپن بیلٹ سے سینیٹ الیکشن کی حمایت کردی ہے ۔

لاہور (ویب ڈیسک) سینیئر لیگی رہنما نے اوپن بیلٹ سے سینیٹ الیکشن کی حمایت کردی ہے ۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق پاکستان مسلم لیگ (ن) کے سینئر رہنما میاں جاوید لطیف نے کہا ہے کہ میں ذاتی طور پر اوپن بیلٹ کےحق میں ہوں اور اس سے قبل ن ‏لیگ کابھی اوپن بیلٹ کامؤقف رہا ہے۔ تاہم آئینی ترمیم کے لیے اتفاق رائے ہونا ضروری تھا۔نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ آئینی ‏ترمیم کیلئےاتفاق رائے ہوناضروری تھا مخصوص انتخابات کیلئےحکومت ترمیم کیوں لاناچاہتی ہے؟ اپوزیشن چاہتی ہے کہ تمام انتخابات شفاف ہوں۔ حکومت آج اپنی خواہش کےلیےآئینی ترمیم کر رہی ہے۔ جس پر تحفظات ہیں۔ واضح رہے کہ سال 2018ء میں پی ٹی آئی کے 10 ارکان اسمبلی کو خریدنے سے متعلق بھی ویڈیو سامنے آئی ہے ، 2018ء کے سینیٹ انتخابات میں پی ٹی آئی ارکان کو نوٹوں کے انبار لگا کر خریدا گیا ، ویڈیو میں اراکین اسمبلی کو نوٹ گنتے اور بیگ میں ڈالتے دیکھا جا سکتا ہے یہ خرید وفروخت 20 فروری 2018ء سے دو مارچ کے دوران کی گئی، ویڈیو کے منظر عام پر آنے کے بعد حکومت ویڈیوز کو سپریم کورٹ میں زیر سماعت اوپن بیلٹنگ کیس میں بطور شواہد پیش کیا جاسکتا ہے ، جس کے لیے وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کے اجلاس کے دوران سینیٹ کے الیکشن سے متعلق گفتگو ہوئی۔بتایا گیا ہے کہ سینیٹ انتخابات 2018ء میں اراکین کی جانب سے ووٹ بیچنے کی ویڈیوز کو بطور شواہد سپریم کورٹ لے جانے پر غور کیا گیا ، اس ضمن میں حکومت کی جانب سے قانونی ماہرین سے مشاورت کی بھی جائے گی۔ یہاں واضح رہے کہ سینیٹ انتخابات میں ارکان اسمبلی کو خریدنے سے متعلق تہلکہ خیز انکشافات سامنے آ گئے ہیں ، جن کے مطابق سال 2018ء کے سینیٹ انتخابات میں پی ٹی آئی ارکان کو بلا کر نوٹوں کے انبار لگا کر خریدا گیا۔ خیال رہے کہ اس سے قبل سابق وزیراعظم اور سینئر لیگی رہنما شاہد خاقان عباسی بھی اوپن بیلٹ کے ذریعے الیکشن کی حمایت کر چکے ہیں