بکریوں کے ساتھ ’’ویڈیو کال سروس‘‘ نے کسان کو کروڑ پتی بنا دیا

ایک برطانوی کسان اپنے باڑے میں موجود بکریوں کے ساتھ ’’ویڈیو کال سروس‘‘ کے ذریعے ایک سال میں 50 ہزار پاؤنڈ سے زیادہ (تقریباً ایک کروڑ 10 لاکھ پاکستانی روپے) کما چکا ہے۔ ڈاٹ مکارتھی نامی اس کسان نے یہ سروس پچھلے سال مذاق ہی مذاق میں شروع کی تھی اور اعلان کیا تھا کہ اگر کوئی اس کے باڑے میں موجود چھ بکریوں میں سے کسی ایک کو بھی ویڈیو کال پر دیکھنا چاہتا ہے تو اسے پانچ منٹ ویڈیو کال کا 5 پاؤنڈ معاوضہ دینا ہوگا۔ کورونا وبا کے باعث سخت لاک ڈاؤن میں بند، اکتائے ہوئے لوگوں نے اس مذاق کو سنجیدگی سے لیا اور بکریوں کو دیکھنے اور ان کے بارے میں جاننے کےلیے ویڈیو کالز کرنا شروع کردیں۔ چند دنوں میں بکریوں کے ساتھ ویڈیو کالز اتنی مقبول ہوگئیں کسان کے تمام ملازمین الگ الگ اسمارٹ فونز لے کر ’’صارفین‘‘ کو ویڈیو کال پر بکریوں سے رُوبرو کرتے اور ان کے بارے میں بتاتے۔ یہی نہیں بلکہ کچھ لوگوں نے زوم پر کانفرنس ویڈیو کال پر ان بکریوں کو دیکھنے کی خواہش ظاہر کی جس دوران وہ ان بکریوں کو دیکھنے کے علاوہ آپس نے ان کے بارے میں باتیں بھی کرتے جارہے تھے۔ اس ’’خصوصی کانفرنس کال‘‘ کی علیحدہ سے زیادہ رقم لی گئی۔ مکارتھی کا کہنا ہے انہوں نے اپنی ویب سائٹ پر صارفین کےلیے یہ سہولت بھی رکھی ہے کہ وہ دوستوں یا رشتہ داروں کے ساتھ کانفرنس کال میں ان کے فارم کی کسی بھی بکری کو شامل کرسکتے ہیں، جس سے ایک طویل کال میں ہونے والی اکتاہٹ ختم کی جاسکتی ہے۔